صلوٰۃ تسبیح

حضرت ابورافع رضی اللہ عنہ سے روایت ہے ، انہوں نے کہا : رسول اللہ ﷺ نے حضرت عباس رضی اللہ عنہ سے فرمایا :’’ چچا جان ! کیا میں آپ کو ایک تحفہ نہ دوں ؟ آپ کو فائدہ نہ پہنچاؤں ؟ آپ سے صلہ رحمی نہ کروں ؟‘‘ انہوں نے کہا : اللہ کے رسول ! ضرور ایسا کیجیے ۔ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا :’’ آپ چار رکعتیں پڑھیں ۔ ہر رکعت میں سورہ فاتحہ اور کوئی دوسری سورت پڑھیں ۔ جب قراءت مکمل ہو جائے تو رکوع کرنے سے پہلے پندرہ بار یوں کہیں :

سُبْحَانَ اللَّهِ وَالْحَمْدُ لِلَّهِ وَلاَ إِلَهَ إِلاَّ اللَّهُ وَاللَّهُ أَكْبَرُ

اللہ پاک ہے اور تعریفیں اللہ ہی کے لیے ہیں اور اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں اور اللہ سب سے بڑا ہے ‘‘

پھر رکوع کریں تو ( رکوع کی حالت میں رکوع کی تسبیحات پڑھنے کے بعد ) یہ تسبیح دس بار پڑھیں ، پھر رکوع سے سر اٹھائیں تو ( قومے کے اذکار کے بعد ) دس بار یہ کہیں ، پھر سجدہ کریں تو ( سجدے کی تسبیحات کے بعد ) دس بار یہی پڑھیں ، پھر سر اٹھائیں تو ( جلسے کی دعا پڑھ کر ) دس بار یہ پڑھیں ، پھر سجدہ کریں تو ( سجدے کی تسبیحات کے بعد ) دس بار یہی پڑھیں ، پھر ( سجدے سے ) سر اٹھائیں تو کھڑے ہونے سے پہلے ( جلسہ استراحت میں ) دس بار یہی پڑھیں ۔ یہ ایک رکعت میں پچھتر تسبیحات ہیں اور چار رکعتوں میں تین سو تسبیحات ہیں ۔ اگر آپ کے گناہ صحرائے عالج کی ریت ( کے ذروں ) کے برابر بھی ہوں گے تو ( اس نماز کی وجہ سے ) اللہ تعالیٰ وہ سب بخش دے گا ۔‘‘ حضرت عباس رضی اللہ عنہ نے عرض کیا : اے اللہ کے رسول ! جو روزانہ یہ نماز نہ پڑھ سکے تو ( کیا کرے ؟ ) آپ نے فرمایا :’’ ہفتے میں ایک بار پڑھ لیں ۔ اگر آپ سے یہ بھی نہ ہو سکے تو مہینے میں ایک بار پڑھ لیں ۔‘‘ حتی کہ نبی ﷺ نے فرمایا :’’ ورنہ سال میں ایک بار تو پڑھ لیں ۔‘‘

Sunnan e Ibn e Maja#1386

حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ أَبُو عِيسَى الْمَسْرُوقِيُّ حَدَّثَنَا زَيْدُ بْنُ الْحُبَابِ حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ عُبَيْدَةَ حَدَّثَنِي سَعِيدُ بْنُ أَبِي سَعِيدٍ مَوْلَى أَبِي بَكْرِ بْنِ عَمْرِو بْنِ حَزْمٍ عَنْ أَبِي رَافِعٍ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ لِلْعَبَّاسِ يَا عَمِّ أَلَا أَحْبُوكَ أَلَا أَنْفَعُكَ أَلَا أَصِلُكَ قَالَ بَلَى يَا رَسُولَ اللَّهِ قَالَ فَصَلِّ أَرْبَعَ رَكَعَاتٍ تَقْرَأُ فِي كُلِّ رَكْعَةٍ بِفَاتِحَةِ الْكِتَابِ وَسُورَةٍ فَإِذَا انْقَضَتْ الْقِرَاءَةُ فَقُلْ سُبْحَانَ اللَّهِ وَالْحَمْدُ لِلَّهِ وَلَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ وَاللَّهُ أَكْبَرُ خَمْسَ عَشْرَةَ مَرَّةً قَبْلَ أَنْ تَرْكَعَ ثُمَّ ارْكَعْ فَقُلْهَا عَشْرًا ثُمَّ ارْفَعْ رَأْسَكَ فَقُلْهَا عَشْرًا ثُمَّ اسْجُدْ فَقُلْهَا عَشْرًا ثُمَّ ارْفَعْ رَأْسَك فَقُلْهَا عَشْرًا ثُمَّ اسْجُدْ فَقُلْهَا عَشْرًا ثُمَّ ارْفَعْ رَأْسَكَ فَقُلْهَا عَشْرًا قَبْلَ أَنْ تَقُومَ فَتِلْكَ خَمْسٌ وَسَبْعُونَ فِي كُلِّ رَكْعَةٍ وَهِيَ ثَلَاثُ مِائَةٍ فِي أَرْبَعِ رَكَعَاتٍ فَلَوْ كَانَتْ ذُنُوبُكَ مِثْلَ رَمْلِ عَالِجٍ غَفَرَهَا اللَّهُ لَكَ قَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ وَمَنْ لَمْ يَسْتَطِعْ يَقُولُهَا فِي يَوْمٍ قَالَ قُلْهَا فِي جُمُعَةٍ فَإِنْ لَمْ تَسْتَطِعْ فَقُلْهَا فِي شَهْرٍ حَتَّى قَالَ فَقُلْهَا فِي سَنَةٍ

It was narrated that Abu Rafi’ said: “The Messenger of Allah (ﷺ) said to ‘Abbas: ‘O uncle, shall I not give you a gift, shall I not benefit you, shall I not uphold my ties of kinship with you?’ He said: ‘Of course, O Messenger of Allah.’ He said: ‘Pray four Rak’ah, and recite in each Rak’ah the Opening of the Book (Al-Fatihah) and a Surah. When you have finished reciting, say: Subhan-Allah wal-hamdu Lillah wa la ilaha illallah wa Allahu Akbar (Glory is to Allah, praise is to Allah, none has the right to be worshipped but Allah and Allah is the Most Great) fifteen times before you bow in Ruku’. Then bow and say it ten times; then raise your head and say it ten times; then prostrate and say it ten times; then raise your head and say it ten times; then prostrate and say it ten times; then raise your head and say it ten times before you stand up. That wil be seventy-five times in each Rak’ah and three hundred times in the four Rak’ah, and even if your sins are like the grains of sand, Allah will forgive you for them.’ He said: ‘O Messenger of Allah, what if someone cannot say it in one day?’ He said: ‘Then say it once in a week; if you cannot, then say it once in a month’ until he said: ‘Once in a year.’

Leave a Reply

Your email address will not be published.